خاتون نے بے وفا شوہروں کی جاسوسی کیلئے دفتر کھول لیا

2016 ,دسمبر 21



بیجنگ (شفق ڈیسک) چین میں اس خاتون کو مسٹریس کِلر غیر ازدواجی تعلقات تباہ کرنیوالی اور خواتین کیلئے سراغ رسانی کرنیوالی عورت کے القاب دیئے گئے ہیں کیونکہ وہ گزشتہ 15 برس سے ان خواتین کی مدد کر رہی ہیں جو اپنے شوہروں کی دوسرے عورتوں میں دلچسپی پر رو رو کر ہلکان ہوتی رہتی ہیں۔ چین کی یہ خاتون بے وفا شوہروں کیخلاف ثبوت جمع کر کے متاثرہ خواتین کو بدلہ لینے میں مدد فراہم کررہی ہیں۔ خاتون خود 90 کی دہائی میں اپنے شوہر کی دوسری عورت میں دلچسپی اور اس عذاب کو جھیل چکی ہیں۔ انکے شوہر نے بینک اکاؤنٹ الگ کرکے گھریلو اشیا کو بانٹ کر کہا کہ وہ اب اسکے ساتھ نہیں رہنا چاہتے۔ اس خبر سے خاتون دل ٹوٹ گیا لیکن انہوں نے اپنے شوہر کی جاسوسی کرکے اس خاتون کا انکشاف کیا اور اسے بے عزت کرنے کے بعد دوسری خواتین کی مدد کا فیصلہ کیا۔اب وہ دوغلے شوہروں کو رنگے ہاتھوں پکڑ کر معاملے کو اختتام تک پہنچاتی ہیں۔ خاتون نے اس کام کو انجام دینے کیلئے 2003ء میں ایک باقاعدہ ایجنسی کی بنیاد رکھی اور اسے منظم کرنا شروع کیا اور اب خواتین اپنے شوہروں کی جاسوسی کیلئے ان سے رابطہ کرتی ہیں جسکا یہ معاوضہ بھی لیتی ہیں۔ وہ اپنے صارفین سے صرف ضروری اخراجات لیتی ہیں جو اس کام کیلئے درکار ہوتے ہیں۔ چونکہ چین میں پولیس ذاتی اور گھریلو معاملات سے دور رہتی ہے اس لئے یہ خاتون متاثرہ خواتین کیساتھ مل کر دھوکے باز خواتین کو ذلیل کرنے اور ان کی پٹائی کرنے میں بھی مدد دیتی ہے۔ 59 سالہ خاتون اپنی مؤکل خواتین کے کہنے پر انکے بے وفا شوہروں اور انکی آشنا عورتوں کی جاسوسی بھی کرتی ہیں اور ثبوت جمع کرکے دیتی ہیں۔ وہ کھمبوں، ٹیکسی اور درخت کے عقب میں چھپ کر ثبوت جمع کرتی ہیں۔ چین میں مالی آسودگی سے خواتین اور شادی شدہ مردوں کے درمیان غیر ازدواجی تعلقات میں نمایاں اضافہ ہوا ہے لیکن اس کی روک تھام اور سزا کا نظام بہت کمزور ہے۔

متعلقہ خبریں