عورت کی بات نہ ماننے پر وحشی جنسی تشدد

2016 ,دسمبر 31



 

ممبئی (نیوز ڈیسک)جنسی جرائم کی خبریں تو روز سامنے آتی ہیں لیکن ایسی خبر آپ نے کبھی نہ سنی ہو گی کہ ایک گھر کی خواتین سمیت سب افراد نے مل کر اپنی ملازمہ کی عصمت دری کر ڈالی۔ اخبار ٹائمز آف انڈیا کی رپورٹ کے مطابق شیطان کا پیروکار یہ خاندان بھارتی شہر الحاس نگر شہر کے علاقے وتھل وادی سے تعلق رکھتا ہے۔ ان بدبختوں کے ظلم کا نشانہ بننے والی خاتون کچھ عرصے سے ان کے گھر میں ملازمہ کے طور پر کام کررہی تھی۔ متاثرہ خاتون نے پولیس کو بتایا کہ ایک روز گھر کی سربراہ خاتون الکا کے ساتھ اس کی کچھ تلخ کلامی ہوگئی تو الکا اور اس کی بہن سنگیتا نے اسے پکڑ کر ایک کمرے میں بند کردیا۔ کچھ دیر بعد الکا کے بیٹے الاس اور ستیش، سنگیتا کا خاوند دیپک اور اس کا ایک دوست نکمبھ اسے سزا دینے کے لئے کمرے میں آگئے۔ ان چاروں نے حیوانیت کی انتہا کرتے ہوئے خاتون کو بے لباس کیا اور پھر الکا اور سنگیتا کے سامنے گینگ ریپ کا نشانہ بنایا۔ متاثرہ خاتون کا کہنا ہے کہ ملزمان نے اسے جان سے ماردینے کی دھمکیاں دیں اور اس واقعے کو خفیہ رکھنے کے لئے ہر طرح سے دباؤ ڈالا۔ بدنصیب خاتون ان کے خوف سے خاموش ہوگئی، لیکن اس خاموشی کا فائدہ اٹھاتے ہوئے چند دن بعد ستیش اور اس کا بھائی کلیان کے علاقے میں اس کے گھر آن پہنچے اور ایک بار پھر اسے جبری زیادتی کا نشانہ بنایا۔ اس واقعہ کے بعد خاتون نے مقامی پولیس سے رابطہ کیا لیکن بدقسمتی دیکھئے کہ پولیس نے مجرموں کے خلاف کارروائی کرنے کی بجائے الٹا اسے ہی دھتکار کربھگا دیا۔ خاتون کے واویلا کرنے پر علاقے کے کچھ معززین نے مداخلت کی اور بالآخر ملزمان کے خلاف مقدمہ درج کیا گیا، لیکن تاحال ایک ملزم کو گرفتار کیا گیا ہے جبکہ دونوں خواتین سمیت باقی تمام ملزمان مفرور ہیں۔

متعلقہ خبریں