ٹوئٹر پر ترک صدر کے ترجمان اوراسرائیلی وزیراعظم کی لڑائی ہوگئی ، ایک دوسرے کو کھری کھری سنادیں

2018 ,دسمبر 23



تل ابیب، انقرہ(مانیٹرنگ ڈیسک ) ترک صدررجب طیب اردوان پر اسرائیلی وزیراعظم کو تنقید مہنگی پڑگئی اور ترک حکام نے اسرائیلی وزیراعظم نیتن یاہوکو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے سفاک قاصر قراردیدیا۔ تفصیلات کے مطابق ترکی کے وزیرخارجہ میولوت چاوش نے اسرائیلی وزیراعظم نیتن یاہو کو مقبوضہ فلسطین پر جاری ظلم و بربریت پر جدید دورکا سفاک قاتل قرار دے دیا۔ سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر ترک اور اسرائیلی حکام کے درمیان لفظی گولہ باری کا آغاز ترک صدر کے ایک بیان پر اسرائیلی وزیراعظم کی اس ٹویٹ سے ہوا جس میں نیتن یاہو نے قبرص میں کردوں کے خلاف آپریشن کو نسل کشی قرار دیتے ہوئے اردگان حکومت کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا۔اسرائیلی وزیراعظم نے لکھاکہ کرد علاقے میں ترک آرمی ترکی کے اندر اور باہر بچوں اور خواتین کو بھی نہیں بخش رہی ، اسے اسرائیل کو سکھانے کی ضرورت نہیں۔

اسرائیلی وزیراعظم کے اس ٹوئیٹ پر جہاں ٹوئٹر کے دیگر صارفین نے اپنی اپنی آرا کا اظہار کیا ، وہیں ترک حکام بھی جواب دینے کے لیے آگے آگئے اور فلسطین پر قابض یہودی ملک اسرائیل کے وزیراعظم کو کھری کھری سنادیں۔اسرائیلی وزیراعظم نیتن یاہو کی ٹویٹ پر ترک صدر طیب اردگان کے ترجمان ابراہیم کیلن نے طنزاً لکھا کہ کرپشن الزامات کا سامنا کرنے والے اسرائیلی وزیراعظم کردوں کی ہمدردی سمیٹنے کی کوشش میں اپنے اندرونی مسائل سے جان نہیں چھڑا پائیں گے۔

ترک صدر کے ترجمان نے مزید لکھا کہ نیتن یاہو کو ترک صدر کے سچ بولنے پر اعتراض کرنے کے بجائے فلسطین پر اپنے قبضے اور فلسطینی شہریوں پر بہیمانہ تشدد اور نسل کشی کے عمل کو ختم کرنا چاہیئے۔دونوں ممالک کے حکمرانوں کی طرف سے ایک دوسرے کو تابڑ توڑ جواب دیئے جانے پر مسلمان سوشل میڈیا صارفین بھی کسی سے پیچھے نہ رہے اور اسرائیل مخالف اپنے جذبات کا اظہار کچھ یوں کیا۔

متعلقہ خبریں