افسوسناک خبر: دنیا کے سب سے میڈیا گروپ کا صحافی افغانستان میں قتل کر دیا گیا

2018 ,مئی 1



کابل (مانیٹرنگ ڈیسک) افغانستان میں ایک اور صحافی کو گولی مار کر ہلاک کر دیا گیا ،صحافی کو افغان صوبے خوست میں اس وقت گولیوں کا نشانہ بنایا گیا جب وہ موٹر سائیکل پر اپنے فرائض کی انجام دہی کے لئے جا رہا تھا۔مقامی انتظامیہ کے مطابق خوست میں نا معلوم افراد کی فائرنگ سے ہلاک ہونے والے شخص کی شناخت 29سالہ احمد شاہ کے نام سے ہو ئی جو صحافت کے پیشے سے منسلک اوربرطانوی خبر رساں ادارے کے لئے رپورٹنگ کی ذمہ داریاں انجام دیتا تھا۔ عالمی صحافتی تنظیموں نے احمد شاہ کے قتل کی سخت الفاظ میں مذمت کرتے ہو ئے حکام سے واقعے کی تحقیقات کا مطالبہ کیا ہے۔رواں سال افغانستان میں مارے جانے والے صحافیوں کی تعداد14سے ےتجا وز کر چکی ہے۔ انٹرنیشنل فیڈریشن آف جرنلسٹس کی رپورٹ کے مطابق دنیا بھر میں سال 2017 کے دوران 81 صحافی اپنی جانوں سے گئے ،شام کے بعد افغانستان صحافیوں کے لئے خطر ناک ترین رہا جبکہ2016میں مارے گئے صحافیوں کی93تھی اور افغانستان اس سال بھی صحافیوں کیلئے خطرناک ترین ممالک میں شامل رہا۔ دوسری جانب ایک خبر کے مطابق پچھلے 16 برس کے عرصے میں ملک میں 60 سے زیادہ صحافي مارے جا چکے ہیں اور حکام نے ان ہلاکتوں کی کبھی تحقیقات نہیں کی۔افغانستان میں میڈیا کے تحفظ کے لیے آواز اٹھانے والوں کا کہنا ہے کہ اس سال کے پہلے 10 مہینوں میں کم از کم 11 صحافي ہلاک ہو گئے اور سینکڑوں کو لڑائیوں کی وجہ سے اپنا گھر چھوڑ کر بھاگنے پر مجبور ہونا پڑا۔ ان کا کہنا ہے کہ یہ سال أفغان صحافیوں کے لیے مہلک ترین سال ثابت ہوا ہے۔افغان صحافیوں کے تحفظ کے لیے کام کرنے والے گروپ نے، جو مقامی میڈیا پر نظر رکھتا ہے، کہا ہے کہ پچھلے 16 برس کے عرصے میں ملک میں 60 سے زیادہ صحافي مارے جا چکے ہیں اور حکام نے ان ہلاکتوں کی کبھی تحقیقات نہیں کی۔

متعلقہ خبریں